آئندہ مالی سال کے بجٹ میں زراعت کیلئے مجموعی طور پر 53 ارب 19 کروڑ روپے مختص کئے گئے،وزیر خزانہ پنجاب

لاہور: پنجاب حکومت نے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں زراعت کے شعبہ کیلئے مجموعی طور پر 53 ارب 19 کروڑ روپے مختص کئے ہیں جن میں سے 14 ارب 77 کروڑ روپے ترقیاتی مقاصد کے حصول کیلئے خرچ کئے جائیں گے ۔علاوہ ازیں زرعی شعبہ میں انسینٹیو بیسڈ کراپ زوئنگ کو فروغ دیا جائے گا جس کے تحت پنجاب کی زمینوں کے زرعی پوٹینشنل کے مطابق زوئونگ کے بعد کسانوں کو ضرورت کے مطابق سہولیات اور مراعات مہیا کی جائیں گی، اسی طرح آبپاشی کے شعبہ میں سپرینکرل اریگیشن اور ڈریپ اریگیشن کو فروغ دیا جائے گاجس سے نہ صرف پانی کی بچت بلکہ ایگریکچر کا شعبہ جدید ٹیکنالوجی سے ہم آہنگ ہو سکے گا۔

یہ بات صوبائی وزیر خزانہ اویس لغاری نے بدھ کے روز پنجاب کا آئندہ مالی سال کا بجٹ 2022-23 پیش کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت زرعی اجناس کی پیداوار میں اضافے کیلئے ایک جامع پروگرام پنجاب ریسائیلنٹ اینڈ انکلیوسیو ایگریکلچر ٹرانسفارمیشن کے نام سے متعارف کر رہی ہے جس کے تحت زرعی شعبہ کو جدید بین الاقوامی ٹیکنالوجی سے ہم آہنگ کیا جا سکے گا۔ اس مقصد کیلئے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں 3 ارب 65 کروڑ روپے مختص کئے جا رہے ہیں۔ زرعی شعبہ میں ریسرچ اینڈ ڈویلپمر کی اہمیت کے پیش نظر ہماری حکومت آئندہ مالی سال میں 8 نئے منصوبوں کا آغاز کرنے جا رہی ہے جن میں دالیں، مونگ پھلی اور بلیک بیری جیسی ہائی ویلیو فصلوں کی پیداوار میں اضافے کو ممکن بنایا جائے گا۔ اس طرز کے منصوبوں سے صوبے میں زرعی معیشت کو فروغ حاصل ہو گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے