جانوروں کو فربہ کرنا منافع بخش کاروبار کی صورت اختیارکرچکا: ڈائریکٹر لائیوسٹاک

فیصل آباد (لائیوسٹاک پاکستان) محکمہ لائیو سٹاک و ڈیری ڈویلپمنٹ فیصل ۱ٓبادکے ڈویژنل ڈائریکٹرڈاکٹر حیدر علی خان نے کہا ہے کہ غیر نسلی اور کم دودھ دینے والی دیسی گائیوں اور غیر ملکی بیف بریڈ کے ملاپ سے زیادہ گوشت والے مخلوط جانور حاصل کئے جا سکتے ہیں اس طرح جہاں ملکی بڑے گوشت کی ضروریات پوری کی جا سکتی ہیں وہیں اضافی گوشت اور اس سے تیارکردہ دیگر مصنوعات برآمد کرکے قیمتی زر مبادلہ بھی حاصل کیاجاسکتاہے۔

انہوں نے کہاکہ جانوروں کو فربہ کرنا ایک منافع بخش کاروبار کی صورت اختیارکرچکاہے لہٰذا بہتر منصوبہ بندی کر کے زیادہ منافع حاصل کیا جا سکتاہے۔ انہوں نے کہاکہ مویشی پال حضرات معیاری بڑاگوشت حاصل کرنے کیلئے 9سے 15 ماہ کے کسی بھی نسل کے کٹڑے، بچھڑے اور معیاری چھوٹا گوشت حاصل کرنے کیلئے 6سے12ماہ کے کسی بھی نسل کے بکرے، چھترے، دنبے کو 3سے 4ماہ تک ماہرین لائیو سٹاک کی مشاورت سے متوازن خوراک کھلا کر فربہ و گوشت کا حصول ممکن بنا سکتے ہیں۔

انہوں نے بتایاکہ غیر پیداوار ی بیل، گائے، بھینس بھی اس کاروبار کیلئے نہایت موزوں ہے۔ انہوں نے مزید کہاکہ مویشی پال حضرات جانوروں ومویشیوں کو مختلف بیماریوں خصوصاً منہ کھر، گل گھوٹو، انٹیرو ٹا کسیمیااور پلورونمونیا سے بچانے کیلئے ویٹرنری ہسپتال سے بروقت حفاظتی ٹیکے لگوائیں۔ انہوں نے کہاکہ مزید رہنمائی یا معلومات اور مشاورت کیلئے مویشی پال حضرات محکمہ لائیوسٹاک کی فری ہیلپ لائن سے بھی رابطہ کر سکتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے