دودھ دینے والی اور خشک گائے و بھینس کوروزانہ 45لیٹر پینے کاتازہ پانی فراہم کیا جائے ،ڈائریکٹر لائیوسٹاک

فیصل آباد (لائیوسٹاک پاکستان) محکمہ لائیو سٹاک و ڈیری ڈویلپمنٹ فیصل آباد کے ڈویژنل ڈائریکٹر ڈاکٹرحیدر علی خان نے بتایا کہ پینے کا تازہ و صاف پانی جس طرح انسانی صحت کیلئے انتہائی مفید ہے وہیں جانوروں، مویشیوں اور پرندوں بالخصوص دودھ دگوشت دینے والے جانوروں پر بھی اس کے مثبت اثرات مرتب ہوتے ہیں لہٰذا اگر دودھ دینے والی گائے و بھینس کو روزانہ 45 لیٹراور خشک گائے و بھینس کو بھی 45لیٹر پینے کاتازہ پانی فراہم کیا جائے تو اس کی روزانہ دودھ و گوشت کی پیداوار20فیصد تک بڑھ سکتی ہے جبکہ مرغیوں کیلئے بھی 24گھنٹے کے دوران آدھا لیٹر اور بھیڑ بکریوں کیلئے دن میں کم از کم 7لیٹر پینے کاپانی فراہم کرنا بھی ضروری ہے۔

انہوں نے مویشی پال حضرات کو ہدایت کی کہ وہ دن میں 4مرتبہ باڑوں کے اندر مویشیوں و جانوروں کو تازہ پانی و افر مقدارمیں فراہم کریں تاکہ دودھ اور گوشت کی پیداوارمیں خاطر خواہ اضافہ یقینی ہوسکے۔

انہوں نے کہاکہ گائے وبھینس سمیت دودھ دینے والے دیگر مویشیوں و جانوروں کو متوازن غذا اور تازہ پانی فراہم کرکے دودھ کی یومیہ پیداوار میں اضافہ کیاجا سکتاہے وہیں مویشی پال حضرات جانوروں کو حفاظتی ویکسین کے ٹیکے لگوانے میں بھی کسی تساہل کامظاہرہ نہ کریں تاکہ مویشیوں وجانوروں کی دودھ و گوشت کی صلاحیت متاثر نہ ہوسکے اور عوام الناس کو حفظان صحت کے اصولوں کے مطابق صحت مند دودھ و گوشت کی فراہمی بھی ممکن ہو سکے۔ انہوں نے بتایاکہ مویشیوں کی جس قدر بہتر نگہداشت کی جائے وہ اسی قدر بہتر افزائش پاتے اور زیادہ پیداوار فراہم کرتے ہیں۔انہوں نے بتایاکہ جس طرح عام انسان کیلئے تازہ پانی انتہائی اکسیر کی حیثیت رکھتاہے بالکل اسی طرح مویشیوں و جانوروں میں بھی پانی کی اہمیت و افادیت سے انکار ممکن نہیں۔