کرپشن،اختیارات کا ناجائز استعمال، 4472 سرکاری افسر و ملازم گرفتار

لاہور( حافظ فیض احمد) محکمہ اینٹی کرپشن پنجاب نے اگست2018تا جنوری2021کے دوران رشوت لینے ، فراڈ ، کرپشن اور اختیارات کا ناجائز استعمال کرنے کے الزام میں مختلف سرکاری محکموں کے 4472 کرپٹ افسران اور ملازمین کو گرفتار کیا ۔ اینٹی کرپشن نے پنجاب کی تاریخ میں پہلی بار بڑی تعداد میں گریڈ19، گریڈ18اورگریڈ17کے 220افسران کو بھی کرپشن کے مختلف الزام میں گرفتار کیا اور مقدمات درج کر کے ملزمان سے لاکھوں روپے کی ریکوری کی ۔ ذرائع کے مطابق ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب گوہر نفیس نے کرپٹ مافیا کے خلاف افسران کو فری ہینڈ دیا ۔ اینٹی کرپشن پنجاب کی رپورٹ کے مطابق محکمہ اینٹی کرپشن نے ماہ اگست2018سے جنوری2021کے دوران رشوت لینے ، فراڈ کرنے ، کرپشن اور اختیارات کا ناجائز استعمال کرنے کے الزام میں گریڈ19کے 13، گریڈ18کے 70، گریڈ17کے 137افسر، گریڈ16کے 177 جبکہ گریڈ1تا گریڈ15کے تک4075ملازمین کو گرفتار کیا جن کا تعلق بورڈ آف ریونیو، محکمہ پولیس، ایل ڈی اے ، لوکل گورنمنٹ، ایکسائز، محکمہ انہار، تعلیم، خوراک، زراعت، ضلعی حکومت، محکمہ صحت، ڈسڑکٹ اکاوئنٹس اور دیگر محکموں سے ہے جبکہ اینٹی کرپشن پنجاب نے پہلی بار پٹواری مافیا اور کانسٹیبل سے نکل کر گریڈ19اور گریڈ18کے کرپٹ افسران کو بھی پکڑا اور ان سے 10.29ملین کی ریکوری کر کے رقم سرکاری خزانے میں جمع کرائی۔رپورٹ کے مطابق گریڈ19کے 4، گریڈ18کے 11،گریڈ17کے 27افسر، گریڈ16کے 36 جبکہ گریڈ1تا 15تک کے 516ملازمین کو رشوت لیتے ہوئے رنگے ہاتھوں گرفتار کیا گیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے