سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 15 فیصد اضافے کے اطلاق سے متعلق دو تجاویز

پہلی تجویز ہے کہ ایڈہاک الاؤنسز ضم کرکے بنیادی تنخواہ پر پندرہ فیصلہ اضافہ دیا جائے،اس صورت میں ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ بہت زیادہ ہو گا،دوسری تجویز ہے کہ موجودہ بنیادی تنخواہ پر ہی 15 فیصد اضافہ دیا جائے جس کے بعد ایڈہاک الاؤنسز ضم کیے جائیں

اسلام آباد(لائیوسٹاک پاکستان) وفاقی کابینہ نے گریڈ 17 سے 22 کے سرکاری افسران کے ایگزیکٹو الاؤنس میں ڈیڑھ سو فیصد اضافے کی اصولی منظوری دے دی۔ایکسپریس نیوز کی رپورٹ کے مطابق صوبوں کی طرز پر وفاق میں بھی افسران کو بنیادی نتخواہ کے ڈیڑھ سو فیصد کے برابر ایگزیکٹو الاؤنس دینے کا اصولی فیصلہ کیا گیا پنجاب، کے پی کے، سندھ میں ایگزیکٹو الاؤنس پہلے سے ہی لاگو ہے۔

بجٹ میں گریڈ 22 کے افسران کو ڈسپیرٹی الاؤنس دینے اور گریڈ 20 تا 22 کے افسران کو ملنے والا اردلی الاؤنس 14 ہزار روپے سے بڑھا کر 25 ہزار روپے تک کرنے کی تجویز ہے۔سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 15 فیصد اضافے کے اطلاق سے متعلق دو تجاویز ہیں۔پہلی تجویز کے مطابق ایڈہاک الاؤنسز ضم کرکے بنیادی تنخواہ پر پندرہ فیصلہ اضافہ دیا جائے لیکن اس صورت میں ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ بہت زیادہ ہو گا۔

دوسری تجویز ہے کہ موجودہ بنیادی تنخواہ پر ہی پندرہ فیصد اضافہ دیا جائے جس کے بعد ایڈہاک الاؤنسز ضم کیے جائیں۔اس کے نتیجے میں یکم جولائی سے ریٹائرڈ ہونے والے ملازمین کو پنشن کی صورت میں فایدہ پہنچے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے