سیلاب سے پولٹری انڈسٹری شدید متاثر‘ فارمرز انڈوں کو سٹور کرنے پر مجبور ہو گئے‘ شدید مالی نقصان کا خطرہ

کمالیہ( نمائندہ خصوصی) کمالیہ میں پولٹری کی انڈسٹری صوبہ بھر میں پہلے نمبر پر ہے یہاں سے نہ صرف دوسرے صوبوں بلکہ بیرون ملک بھی انڈہ ایکسپورٹ ہوتا ہے۔ جبکہ حالیہ سیلاب کے باعث صوبہ سندھ اور کے پی کے کو جانے والی شاہراہوں کے مسدود ہو جانے کی وجہ سے یہ انڈسٹری شدید متاثر ہوئی ہے۔ ایک محتاط اندازے کے مطابق کمالیہ سے بارہ سے پندرہ لاکھ انڈے صوبہ سندھ اور کے پی کے میں سپلائی کئے جاتے تھے۔

سیلاب کی تباہ کاریوں کی وجہ سے اب ایسا نہیں ہو رہا جس کی وجہ سے پولٹری فارمرز کو مجبوراً انڈوں کو سٹور کرنا پڑ رہا ہے۔ پولٹری کی انڈسٹری سے ہزاروں افراد کا روزگار وابستہ ہے جو کہ اس بحران کی وجہ سے شدید پریشان ہیں۔

سیلاب کی صورت حال میں اگر مزید اضافہ ہوتا ہے تو پولٹری فارمرز سمیت پولٹری سے وابستہ دیگر شعبوں کو بھی شدید مالی نقصان کا خطرہ ہے۔ جبکہ حکومت کی جانب سے اس طرف کوئی توجہ نہ ہونے سے پولٹری فارمرز اور دیگر افراد کیلئے کوئی ریلیف پیکیج نہیں دیا گیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے