پنجاب سے دیگر صوبوں میں جانے والے مویشیوں میں منہ کھر کی تباہ کاریاں اور ممکنہ اقدامات

(لائیوسٹاک پاکستان) صدرڈیری & کیٹل فارمرز ایسوسی ایشن پاکستان شاکر عمر گجر نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ ہم متعدد بار تمام متعلقہ اداروں کو تحریری طور پر منہ کھر کی تباہ کاریوں اور دیگر مسائل کے بارے میں آگاہ کرتے رہے ہیں اب تک محکمہ لائیو اسٹاک اور ایف اے او کی جانب سے مسلسل کوششوں کے باوجود پورے ملک میں مہلک بیماری کی تباہ کاریاں جاری ہیں ۔جناب اعلیٰ لائیو اسٹاک کے حوالے سے صوبہ پنجاب سب سے زیادہ اہمیت کا حامل ہے اس وقت محکمہ لائیو اسٹاک پنجاب کی کار کردگی پچھلے دور کے مقابلے میں بہتر نہیں ہے جو کہ ماضی میں رہی ہے جناب اعلیٰ منہ کھر کی بیماری سے بچاؤ کیلئے محکمے کو زیادہ سے زیادہ کوششیں کرنی چاہئیے کیونکہ ڈیری و کیٹل کی زیادہ تر خریداری پورے ملک کے ڈیری و کیٹل فارمرز پنجاب سے کرتے ہیں اور یہیں سے بیماری سفر کرکے پورے ملک میں پہنچتی ہے اور اس وقت دوددھ اور گوشت کی ضروریات پورا کرنے کیلئے پنجاب کی بڑی منڈیوں جس میں قابل ذکر شیخو پورہ ، گوجرہ ، چیچہ وطنی ، اوکاڑہ، فتح پور ، سالم منڈی ، اور عارف والا منڈی و دیگر منڈیوں سے خریداری کے بعد مویشی پورے ملک میں جا رہے ہیں ۔جس میں سب سے زیادہ خریداری سندھ کے ڈیری و کیٹل فارمرز اور بیوپاریوں کی ہے اور بالترتیب خیبر پختونخواہ،بلوچستان کی بھی بڑی تعداد میں خریداری ہے۔ جناب عالیٰ ان منڈیوں سے خریداری کیا گیا جانور جیسے ہی اپنی منزل پر پہنچتا ہے وہ منہ کھر کا شکار ہو جاتا ہے اور یقیناً آپ سب جانتے ہیں کہ اس مہلک بیماری کی وجہ سے مویشی نہیں فارمر مر جاتا ہے ہم آپ سے مودبانہ درخواست کرتے ہیں کہ آپ فوری طور پر پنجاب بھر میں مویشیوں کی منہ کھر کی اعلیٰ ویکسین کرائیں تاکہ یہ بیماری پنجاب سے خریدے گئے مویشیوں کے تینوں صوبوں میں سفر کرنے سے دوسرے صوبے کے مویشیوں تک نہ پہنچ پائے ضروری ہے کہ پنجاب بھر کے تمام منڈیوں سے فروخت ہونے والے مویشیوں کی ویکسین FAO یا محکمہ لائیو اسٹاک کے ملازمین کریں تاکہ ہم س مہلک بیماری سے اپنے جانورو ں کو محفوظ رکھ سکیں اور پنجاب سے آنے والے متاثرہ جانوروں سے یہ بیماری ملک بھر میں نہ پھیل سکے اور اس بیماری کی تباہ کاری کو روکنے کے لئے چاروں صوبے اپنے داخلے دروازوں پر اعلٰی کوالٹی کی حامل ویکسین لگوائیں پھر صوبے میں داخلے کا سرٹیفکیٹ جاری کریں تاکہ فارمر اور وطن عزیز کی خوشحالی کا سنہرا سفر شروع ہو سکے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے