پنجاب،20سال بعد پھر فروری میں شدیدترین دھند

14پروازیں منسوخ ، ان دنوں بارشیں نہ ہونا دھند کی وجہ دھند بیمار افراد کیلئے خطرناک،فصلوں کیلئے نقصان دہ :ماہرین

لاہور(لیڈی رپورٹر،نیوز رپورٹر‘ مانیٹرنگ ڈیسک )پنجاب میں 20سال بعد پھر شدید ترین دھند لوٹ آئی، 14پروازیں منسوخ کردی گئیں، تفصیلات کے مطابق لاہور سمیت پنجاب کے کئی میدانی علاقے فروری کے دوسرے عشرے میں بھی مسلسل گہری دھند کی لپیٹ میں ہیں ، دھندروزانہ سرِ شام اُترنا شروع ہو جاتی ہے اور ننھی بوندوں کی یہ گہری تہہ اگلے دن دوپہر تک برقرار رہتی ہے ،محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ فروری میں ایسا موسم 20 سال بعدآیا ہے ، بارشیں نہ ہونا دھند کا سبب ہے ،فروری مارچ میں بارشیں ہوتی ہیں مگر اس بار بارشیں برسانے والاسسٹم نہیں بنا، دھند کا سلسلہ مارچ تک جاری رہنے کا امکان ہے ،طبی ماہرین کہتے ہیں کہ دھند سانس کی بیماری میں مبتلا افراد کیلئے خطرناک ہے ، روزانہ سینکڑوں مریض ہسپتال آ رہے ہیں،انہوں نے ماسک پہننے اور غیر ضروری طور پرکھلے مقامات پرنہ جانے کی ہدایت کی ہے ،زرعی ماہرین نے بھی دھند کو فصلوں کیلئے نقصان دہ قرار دیا ہے ،ادھر علامہ اقبال ایئرپورٹ پراندرون و بیرون ممالک آنے جانے والی 14 پروازیں منسوخ کردی گئیں جبکہ 20تاخیر کا شکار ہوئیں،محکمہ موسمیات کے مطابق آئندہ 24گھنٹوں میں سیالکوٹ، نارووال ، لاہور، قصور، گوجرانوالہ،گجرات، جہلم ، حافظ آباد، منڈی بہاؤالدین، جوہرآباد، سرگودھا ،بھکر، فیصل آباد،ٹوبہ ٹیک سنگھ،جھنگ، خانیوال،اوکاڑہ ،ساہیوال، بہاولپور اور بہاولنگر میں دھند چھائے رہنے کی توقع ہے ۔گزشتہ روز کم سے کم درجہ حرارت لہہ منفی10 ، زیارت، استور،سکردو منفی06،گوپس منفی 05 ،کالام منفی04 اور اننت ناگ میں منفی 03،کوئٹہ صفر،مری 3،اسلام آباد6، پشاور 7،سرگودھا، فیصل آباد،چکوال9،ملتان11،کراچی میں 16ڈگری سینٹی گریڈریکارڈ کیا گیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے