لمپی سکن ڈیزیز انسانوں کے لیےخطرے کا باعث نہیں ، ماہرین

اسلام آباد (لائیوسٹاک پاکستان) لائیو سٹاک وڈیری ڈویلپمنٹ ماہرین نے کہاہے کہ لمپی سکن ڈیزیز انسانوں کے لیے قطعی خطرے کا باعث نہیں ہے ۔ ڈائریکٹرلائیو سٹاک وڈیری ڈویلپمنٹ راولپنڈی ڈویژن ڈائریکٹر سرفراز احمد چٹھہ نے لمپی سکن ڈیزیزبارے عوامی ابہام کے پیش نظر واضح کیاکہ لمپی سکن ڈیزیز یعنی گلٹی دار جلدی بیماری ایک وائرس کی وجہ سے ہوتی ہے، جوکیپری پاکس وائرس اور خاندان Poxviridae کا رکن ہے۔

یہ وائرس گائیوں کو زیادہ متاثر کرتا ہے جبکہ بھینس محفوظ ہے ۔لمپی سکن سے متاثرہ جانوروں کی شرح بہت کم ہے اور کسی بھی سطح پر یہ بیماری ا نسانوں کے لیے کسی طرح کے خطرے کا باعث نہیں ہے ۔لمپی اسکن کے نتیجے میں دودھ کی پیداوار میں کمی،جانوروں میں اسقاط حمل، بانجھ پن اور خراب کھالوں کی وجہ سے معاشی نقصان ہوتا ہے۔

یہ وبا ایشیا، افریقہ اور یورپ کے کئی ممالک میں پھیلی ہوئی ہے۔ یہ وائرس دائمی بیماری کا سبب نہیں بنتا۔ایڈیشنل ڈائریکٹر لائیو سٹاک راولپنڈی ڈاکٹر نوید سحر زیدی نے بتایاکہ لمی اسکن بیماری سے بچائو کے لیے جانوروں کی نقل و حمل محدود کی جائے ،متاثرہ جانور کو باقی جانوروں سے علیحدہ رکھا جائے ،مچھر مار سپرے یقینی بنایاجائے اور لائیو سٹاک ماہرین کی مشاورت سے جانوروں کو ملٹی وٹامن سمیت دیگر ادویات دی جائیں ۔ ڈاکٹر نوید سحر زیدی نے بتایاکہ ضلع راولپنڈی میں لمپی سکن سے متاثرہ جانوروں کی تعداد انتہائی کم ہے اورشرح اموات بھی بہت کم ہے ۔ مجموعی طور پرضلع راولپنڈی لمپی اسکن سے محفوظ ہے ۔انہوںنے کہاکہ متاثرہ علاقوں میں محکمہ کی ٹیمیں لمپی اسکن ڈیزیز ویکسینیشن میں مصروف ہیں تاکہ بیماری کے پھیلائو کو روکا جاسکے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے