دلچسپ حقائق

ظاہر اور باطن
ایک اسلامی ملک کی اہم شخصیت علامہ اقبال کی مہمان تھی۔ اس کے اعزاز میں دعوت کے موقع پر چوہدری صاحب نے علامہ اقبال سے سرگوشی کے انداز میں کہا: ”آج مذاق سے باز رہنا‘‘۔
جب معزز مہمان کا حاضرین سے تعارف کروایا جانے لگا تو چوہدری شہاب الدین کی باری پر علامہ اقبال نے کہا: ”یہ ہیں ہمارے دوست چوہدری شہاب الدین، منافقت کے اس دور میں مخلص اور صاف باطن کے مسلمان ہیں۔ ان کا ظاہر اور باطن ایک جیسا ہے‘‘۔ یہ سُننا تھا کہ تقریب میں شریک تمام لوگ بے اختیار ہنس پڑے۔
سکندراعظم کی لات
ڈیماستھز یونان کا مشہور خطیب تھا۔ جب سکندراعظم نے ایتھنز فتح کیا تو دیکھا کہ ڈیماستھز کہیں دور پڑا ہوا ہے۔ سکندراعظم نے اُسے ایک لات ماری۔ اس نے سکندراعظم سے پوچھا:
”تم کون ہو؟‘‘
سکنداعظم نے فخر سے کہا: ”میں بادشاہ یونان ہوں‘‘۔
ڈیماستھز نے کہا: ”ہاں ممکن ہے کہ آپ یونان کے بادشاہ ہوں مگر لات مارنا تو گدھے کا کام ہوسکتا ہے‘‘۔
کم عمر ترین گوریلا لیڈر
میانمار (برما) کے گوریلا نسلی گروپ ”خدا کی فوج‘‘ (God’s Army) کے لیڈر 12 سالہ جڑواں بھائی ہیں۔ یہ دونوں جڑواں بھائی جانی (Johnny) اور لوتھر ہتو (Luther Htoo) میانمار حکومت کو مطلوب ہیں۔ 24 جنوری 2000ء کو ان دونوں بھائیوں نے رچابوری (تھائی لینڈ) کے ایک ہسپتال میں 700 افراد کو 24 گھنٹے تک یرغمال بنائے رکھا۔
سول نافرمانی کا سب سے لمبا مارچ
سول نافرمانی کا سب سے لمبا مارچ 12 مارچ 1930ء کو موہن داس کرم چند گاندھی نے انگریز سرکار کے خلاف شروع کیا۔ اس کا مقصد انگریزوں کی طرف سے نمک پر ٹیکس عائد کرنے کے خلاف احتجاج کرنا تھا۔ گاندھی نے اپنے 78 حامیوں کے ساتھ 241 میل لمبا پیدل مارچ کیا۔ یہ مارچ سابرمتی آشرم سے شروع ہوا اور 5 اپریل 1930ء کو ڈانڈی (گجرات) میں ختم ہوا۔
دُنیا کے مقبول ترین قوال
نصرت فتح علی خان کو قوالی کا بے تاج بادشاہ کہا جاتا ہے۔ 1997ء میں اپنی وفات تک نصرت فتح علی خان کے قوالی کے 125البم مارکیٹ میں آچکے تھے۔ اُنھوں نے دُنیا کے متعدد ممالک میں فن کا مظاہرہ کر کے غیرملکیوں کو اپنا گرویدہ بنالیا۔ جاپانی خاص طور پر ان کے زبردست مداح تھے۔ 1995ء میں امریکہ کے ایک کنسرٹ میں انھیں زبردست پذیرائی ملی۔
برائے نام 4لاکھ سرکاری ملازم
جنوری 1985ء میں افریقی ملک کینیا کے سرکاری تحقیقاتی کمیشن نے ایک عجیب انکشاف کیا کہ ملک کے 4لاکھ سرکاری ملازمین کوئی وجود نہیں رکھتے مگر ان کی تنخواہ ہر ماہ باقاعدگی سے سرکاری خزانے سے وصول کی جاتی ہے۔ کینیا میں اکائونٹنگ کے پیچیدہ نظام کے باعث ان جعلی ملازمین کو نہ پکڑا جا سکا حالانکہ اس سلسلے میں پولیس کی طرف سے کئی کوششیں کی گئیں۔
سانپوں کی اقسام
دُنیا میں سانپ کی تین ہزار نسلیں پائی جاتی ہیں، جن کو دس بڑے خاندانوں میں تقسیم کیا جاتا ہے۔ ”اندھا سانپ‘‘ یا ”کیچوا سانپ‘‘ کی ایک سو اسّی قسمیں ہوتی ہیں۔ یہ سانپ کیچوے کی طرح ہوتے ہیں۔ ان کے جسم کی لمبائی دس سے پندرہ سینٹی میٹر سے زیادہ نہیں ہوتی۔ ان کا جسم ملائم، چمکدار چانوں سے ڈھکا ہوتا ہے۔ اس کا رنگ سُرخی مائل بھُورا یا کالا ہوتا ہے۔ یہ سانپ اندھے ہوتے ہیں اور صرف روشنی اور اندھیرے میں تمیز کر سکتے ہیں۔ یہ ساری زندگی زیرزمین رہتے ہیں اور چیونٹی کے انڈے، دیمک کے انڈے اور کیڑے مکوڑے کھاتے ہیں۔ اس سانپ کی مادہ اپریل سے لے کر مئی تک تین سے آٹھ انڈے دیتی ہے۔ ڈیڑھ سے دو ماہ میں ان انڈوں سے بچے نکل آتے ہیں۔ یہ زمین میں سوراخ بنا کے اس میں رہتا ہے۔ یہ سانپ نوانچ سے لے کر دو فٹ لمبے ہوتے ہیں۔ کیڑے مکوڑے اور خاص طور پر دیمک کھاتے ہیں۔ یہ دُنیا کے گرم علاقوں میں پائے جاتے ہیں۔ ان کے تمام دانت اُوپر والے جبڑے میں ہوتے ہیں۔ اس سے ملتے جلتے سانپ ”ڈوری سانپ‘‘ کی چالیس قسمیں ہوتی ہیں۔ ان کے دانت فقط نچلے جبڑے میں ہوتے ہیں اور یہ بھی دُنیا کے گرم ملکوں میں پائے جاتے ہیں۔
دلچسپ مقدمہ
دسمبر 1985ء میں لاہور ہائی کورٹ کے ایک ڈویژنل بنچ نے ایک مقدمہ قتل میں 19سال قبل بری ہونے والے ملزم شہریار کے خلاف حکومت کی اپیل منظور کرتے ہوئے اسے سزائے عمر قید کا حکم سنایا۔ ملزم شہریار کے خلاف 1966ء میں ایک شخص عبدالعزیز کو قتل کرنے کے الزام میں مقدمہ درج ہوا تھا۔ 1967ء میں ایڈیشنل سیشن جج جھنگ نے ملزم کو اس مقدمہ سے بری کر دیا تھا جس کے خلاف حکومت کی جانب سے اپیل دائر کی گئی جس کی سماعت فاضل عدالت عالیہ میں دسمبر 1985ء میں 19سال بعد ہوئی۔ ملزم کو دوبارہ گرفتار کر لیا گیا۔ فاضل عدالت نے مقدمہ کے مدعی محمد طفیل کے وکیل اور سرکاری وکیل کی سماعت کے بعد 19سال قبل بری ہونے والے ملزم کو سزائے عمرقید کا حکم سنا دیا۔
بنچ پر نام لکھنے کی سزا
مارچ 2003ء میں رڈنگ (برازیل) کی عدالت میں ضمانت کے لئے آنے والے 43 سالہ شخص کو بنچ پر اپنا نام کھودنے پر جیل بھیج دیا گیا۔ آوارڈو ریویرا پر چوری کا مال خریدنے کا الزام تھا اور وہ اپنی ضمانت کے لئے کمرہ عدالت میں اپنی باری کا منتظر تھا۔ ریویرا کو ہر جگہ اپنا نام لکھنے کی بری عادت تھی چنانچہ وہ عدالت میں بھی فارغ نہ بیٹھ سکا اور اپنے سامنے پڑے بنچ پر اپنا نام کھودنا شروع کر دیا۔ عدالت میں موجود پولیس افسر نے جب اسے کام میں مصروف دیکھا تو چپکے سے اس کے پیچھے جا کر کھڑا ہو گیا اور اسے رنگے ہاتھوں پکڑ لیا۔ پولیس افسر نے وہیں جج کو بتایا کہ پہلے مقدمے میں ضمانت کے لئے آنے والا کمرئہ عدالت میں جرم کا مرتکب ہو رہا ہے جبکہ جرم کا ثبوت بھی موجود ہے جس پر جج نے حکم دیا کہ ضمانت کی بات تو بعد میں ہو گی پہلے ریویورا کو سرکاری املاک کو نقصان پہنچانے کے جرم میں پیش کیا جائے۔ لہٰذا پولیس نے ریویرا کو ہتھکڑی لگائی اور جیل بھیج دیا۔
سب سے پہلا پاکستانی بینک
قیام پاکستان کے بعد پہلا کاروباری بینک ”مسلم کمرشل بینک‘‘ (MCB) تھا، جس کا قیام 9جولائی 1947ء کو کلکتہ (بھارت) میں عمل آیا۔ قیام پاکستان کے بعد 17اگست 1948ء کو اسے ڈھاکہ (مشرقی پاکستان) منتقل کر دیا گیا۔ اس اعتبار سے پاکستان میں قائم ہونے والا یہ پہلا بینک ہے۔ 23اگست 1956ء کو اس کا مرکزی دفتر کراچی میں قائم کیا گیا۔ یکم جنوری 1974ء کو وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو کی عوامی حکومت نے بینکوں کو قومی تحویل میں لینے کا اعلان کیا تو یہ بینک بھی حکومتی تحویل میں آگیا۔ نیز اس میں پریمیئر بینک لمیٹڈ کو بھی ضم کر دیا گیا۔ جنوری 1991ء میں نجکاری کے بعد اسے نجی شعبے میں دے دیا گیا۔
تین پائوں والا شخص
میکسیکو کے ایک شخص جوزلوپیز (Jose Lopez) کے تین پائوں تھے۔ اس کا ایک ہی ٹخنہ اور چار انگلیاں تھیں۔ یہ تیسرا پائوں اس کی بائیں ٹانگ کے ٹخنہ کے ساتھ ہی قدرت نے جوڑ رکھا تھا۔
معمر ترین میراتھن کھلاڑی
٭ مردوں میں عمر رسیدہ ترین میراتھن کھلاڑی ہونے کا اعزاز یونان کے ڈائمٹر یون یور داندس (Dimitrion Yordandis) کے پاس ہے۔ اس نے 98 برس کی عمر میں 10 اکتوبر 1976ء کو ایتھنز (یونان) میں یہ ریکارڈ قائم کیا اس کا دورانیہ 7 گھنٹے 33 منٹ تھا۔
٭ عورتوں میں دنیا کی عمر رسیدہ ترین میراتھن کھلاڑی ہونے کا اعزاز جینی وڈایلن کے پاس ہے جس کا تعلق ڈونڈی (سکاٹ لینڈ) سے تھا۔ 1999ء میں جب جینی نے انگلینڈ میراتھن ختم کی تو اس کی عمر 87 سال جبکہ دورانیہ 7 گھنٹے 15 منٹ تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے