پاکستان سٹیزن پورٹل پر جعلی شکایات رجسٹر کرنے اور ان کے حل کی جھوٹی رپورٹس دینے کا انکشاف

سٹیزن پورٹل پر عوام کی شکایات کی خود نگرانی کرتا ہوں‘ عوامی شکایات کے ازالے میں کوئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی ، وزیراعظم نے ایسے سرکاری افسران کے خلاف کارروائی کی ہدایت کردی

اسلام آباد (لائیوسٹاک پاکستان) پاکستان سٹیزن پورٹل پر جعلی شکایات رجسٹر کرنے اور ان کے حل کی جھوٹی رپورٹس دینے کا انکشاف ہوگیا ، وزیراعظم نے ایسے سرکاری افسران کے خلاف کارروائی کی ہدایت کردی ۔ انگریزی روزنامہ ڈان کی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی ہے کہ اپنے ڈیش بورڈز پر جعلی شکایات رجسٹر کرنے اور ان کے حل کی جھوٹی رپورٹس دینے میں ملوث سرکاری افسران کے خلاف کارروائی کی جائے ، وزیر اعظم نے تمام صوبوں کے چیف سیکریٹریز اور آئی جی پیز کو عوامی شکایات میں جعلسازی میں ملوث افسران کے ساتھ کسی قسم رعایت نہ برتنے کی ہدایات کی اور کہا کہ سٹیزن پورٹل پر عوام کی شکایات کی خود نگرانی کرتا ہوں، عوامی شکایات کے ازالے میں کوئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی ، اس لیے عوامی شکایات کے ازالے کی جعلی رپورٹس دینے والے افسران کے ساتھ کوئی نرمی نہیں برتی جائے گی ۔

رپورٹ کے مطابق پرائم منسٹر ڈیلیوری یونٹ نے جعلی شکایات کے حوالے سے 254 افسران کے ڈیش بورڈز پر تحقیقاتی رپورٹ تیار کی ، اس دوران یونٹ کی جانب سے پنجاب میں 154، خیبر پختونخواہ میں 86، سندھ میں تین اور وفاقی حکومت کے 11 افسران کے ڈیش بورڈز کی چھان بین کی گئی ، اس دوران پنجاب میں 44 افسران جعلی شکایتیں درج کروانے میں ملوث پائے گئے جن کے خلاف صوبائی چیف سیکریٹری ایکشن لے چکے ہیں ، ان میں سے 3 افسران کو ملازمت سے برطرف ، 7 کو معطل اور 2 کو ان کے عہدے سے ٹرانسفر کردیا گیا۔ اسی طرح صوبہ خیبر پختونخواہ کے چیف سیکریٹری نے 39 افسران کے خلاف ایکشن لیا اور جعلسازی میں ملوث افسران کو عہدے سے برطرف کردیا جب کہ انسپکٹر جنرل پولیس نے 10 افسران کے خلاف ایکشن لیا ، صوبہ سندھ میں انسپکٹر جنرل پولیس نے جعلسازی میں ملوث 3 افسران کے خلاف ایکشن لیا ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے