سرکاری ملازمین کا پنشن نظام ختم کیاجائے، پے اینڈپنشن کمیشن کی سفارش

اسلام آباد(لائیوسٹاک پاکستان) پے اینڈ پنشن کمیشن نے مستقبل میں سرکاری ملازمین کیلئے پنشن کا نظام ختم کرنے کی سفارشات پیش کی ہیں۔

کمیشن نے تجویز دی ہے کہ موجودہ اسامیوں کے خالی ہونے کے بعد نئی بھرتیوں کو بغیر پنشن نظام پر منتقل کیا جائے اور محض تنخواہوں کی بنیاد پر بھرتیاں کی جائیں۔ رپورٹ کے مطابق مستقبل میں وفاقی وزارتوں، ڈویژنوں اور محکموں میں نئی تخلیق کردہ اسامیوں پر بھرتیاں کنٹریکٹ اور پنشن کے بغیر کی جائیں۔ کمیشن نے موجودہ ملازمین کی تنخواہوں میں پنشن کنٹری بیوشن سسٹم متعارف کروانے کی سفارشات دی ہیں۔ کمیشن نے تجویز دی ہے کہ موجودہ ملازمین کی تنخواہوں کا ایک مخصوص حصہ پنشن کنٹری بیوشن سسٹم کی مد میں کاٹا جائے جس سے پنشن کے اخراجات میں کمی لائی جائے ۔

کمیشن نے کہا ہے کہ پنشن قومی خزانہ پر بوجھ ہے اور بجٹ خسارہ میں اضافہ کی بڑی وجہ ہے ۔ کمیشن کے مطابق موجودہ پنشن اخراجات 500 ارب روپے ہیں جو آئندہ دس سال میں ایک ہزار ارب روپے سے تجاوز کرجائیں گے تاہم نیا نظام نافذ ہونے کے بعد موجودہ پنشن بل دس سے پندرہ سال میں ختم ہوجائے گا اور بجٹ خسارہ میں کمی ہوجائے گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے