وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی کا کسان کنونشن برائے فصلات ربیع22۔2021 میں کاشتکاروں سےخطاب

(لائیوسٹاک پاکستان) گندم کی کاشت اور اس کے پیداواری ہدف کے حصول کے لئے پرعزم ہیں۔حکومت پنجاب کاشتکاروں کو تمام ممکنہ وسائل فراہم کرنے کے لئے ہرممکن اقدامات کر رہی ہے: صوبائی وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی

صوبائی وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی کی ضلع شیخوپورہ میں گندم کے کاشتکاروں کی آگاہی کے لئے منعقدہ تقریب میں بطور مہمان ِ خصوصی شرکت

فیصل آباد: نومبر2021: گندم کی پیداوار میں اضافہ وقت کی اہم ضرورت ہے۔ضلع شیخوپورہ میں گندم کی اوسط پیداوار37 من فی ایکڑ ہے جسے محنت،توجہ اور جدید پیداواری ٹیکنالوجی پر عمل پیرا ہو کر40 من فی ایکڑ تک لیجایا جا سکتا ہے۔گزشتہ سال ضلع شیخوپورہ میں گندم کی فصل5 لاکھ13 ہزار ایکڑ پر کاشت ہوئی جس سے6 لاکھ81 ہزار میٹرک ٹن پیداوار حاصل ہوئی۔مجھے اُمید ہے کہ امسال ضلع شیخوپورہ میں اس سے زیادہ رقبہ گندم کے زیر کاشت لایا جائے گا ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی نے ضلع شیخوپورہ میں گندم کے کاشتکاروں کی آگاہی کے لئے منعقدہ تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ انھوں نے مزید کہا کہ امسال صوبہ پنجاب کے لئے گندم کی کاشت کا ہدف1کروڑ67 لاکھ ایکڑ مقرر کیا گیا ہے۔موجودہ حکومت وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے وژن اور وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان خان بزدار کی قیادت میں زرعی اجناس کی کمی کو دور کرنے اور ملکی سطح پر فوڈ سیکیورٹی کو یقینی بنانے کیلئے اقدامات کررہی ہے۔ انھوں نے کہا کہ کاشت کار بھائیوں کو ہدایت کی جاتی ہے کہ گندم کی زیادہ پیداوار حاصل کرنے کے لئے محکمہ زراعت کی سفارشات، متناسب کھادوں کا استعمال اور سرٹیفائیڈ بیجوں کے استعمال پر زور دیا اور ہدایت کی ہے کہ گندم کی زیادہ سے زیادہ رقبہ پر کاشت کریں ۔ امسال گندم کی منظورشدہ اقسام کے10لاکھ بیگ بحساب1200روپے فی بیگ سبسڈی پر فراہم کئے جارہے ہیں اور مجموعی طور پر1کروڑ ایکڑ رقبہ پر گندم کی منظور شدہ اقسام کا بیج کاشت کیا جا رہا ہے۔کاشتکاروں میں جدید پیداواری ٹیکنالوجی متعارف کروانے کے لئے نمائشی پلاٹ، سیمینارز اور یوم کاشتکاران کا انعقاد کیا جارہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ 12 ارب 54 کروڑ روپے کی خطیر رقم سے گندم کی فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ کے قومی پروگرام پر عملدرآمد جاری ہے اور مالی سال 2021-22 کے دوران اس منصوبہ کے تحت گندم کی مشینی کاشت کے فروغ کے لئے 50 فیصد سبسڈی پر 1 ارب روپے سے زیادہ کی جدید زرعی مشینری سمیت دیگر زرعی مداخل فراہم کیے جارہے ہیں۔اس کے علاوہ وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی نے مزید کہا کہ”کسان کارڈ” کے اجراء کا انقلابی پروگرام شروع کیا گیاہے جس کے ذریعے تمام سبسڈیز کو کیش ٹرانسفر کی صورت میں براہ راست کاشتکاروں کے اکاونٹ میں منتقل کی جا رہی ہیں اورصوبائی وزیر زراعت نے کاشتکاروں سے اپیل کی کہ وہ جلد از جلدکسان کارڈ کی رجسٹریشن مکمل کروائیں تاکہ حکومت کی طرف سے فراہم کردہ سبسڈی براہ راست اُن کے اکاؤنٹ میں منتقلی سے کاشتکار بروقت زرعی مداخل خرید سکیں تاکہ اہم فصلوں کے پیداواری اہداف کو یقینی بنایا جا سکے۔تقریب میں ڈائریکٹر جنرل زراعت (توسیع) ڈاکٹر محمد انجم علی،ڈائریکٹر زراعت (توسیع) لاہور ڈویژن ڈاکٹرشیر محمد شراوت،آفیسر زرعی مطبوعات پنجاب نوید عصمت ،نجی فرٹیلائزر کمپنی کے نمائندگان کے علاوہ مقامی محکمہ زراعت کے افسران،کاشتکاروں اور میڈیا کے نمائندگان کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے