پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل کے ساتویں دورانیے کیلئے ممبران کی نامزدگی

کونسل کے صدر اور نائب صدر کےلئے اجلاس 16 نومبر 2022 کو ہو گا، کونسل میں پی وی ایم اے کا کوئی نمائندہ شامل نہیں

اسلام آباد (لائیوسٹاک پاکستان) پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل کے ساتویں دورانیہ کے لئے حکومت کی طرف سے کونسل کے ممبران کی نامزدگی کر دی گئی ہے۔ کونسل کی سیکرٹری و رجسٹرار ڈاکٹر شبنم فردوس کی طرف سے 8 نومبر 2022 کو نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے جس کے مطابق درج ذیل افراد کونسل کے ممبر مقرر کئے گئے ہیں۔

1۔ ڈاکٹر محمد اکرم اینیمل ہسبنڈری کمشنر اسلام آباد

2۔ ڈاکٹر نذیر حسین کلہوڑو ڈائریکٹر جنرل سندھ انسٹی ٹیوٹ آف اینیمل ہیلتھ کورنگی کراچی

3۔ ڈاکٹر عالم زیب ڈائریکٹر جنرل ایکسٹینشن لائیوسٹاک اینڈ ڈیری ڈویلپمنٹ پشاور

4۔ ڈاکٹر اقبال شاہد سابق ایڈیشنل سیکرٹری ٹیکنیکل محکمہ لائیوسٹاک پنجاب و موجودہ ایکسٹینشن جنرل لائیوسٹاک پنجاب

5۔ ڈاکٹر فاروق ترین ڈائریکٹر پلاننٹ اینڈ ڈویلپمنٹ لائیوسٹاک ڈیپارٹمنٹ کوئٹہ

6۔ ڈاکٹر شعیب سلطان اسسٹنٹ پروفیسر ڈیپارٹمنٹ آف نیوٹریشن ایگریکلچر یونیورسٹی پشاور

7۔ پروفیسر ڈاکٹر محمد غیاث الدین راشدی ڈین فیکلٹی ویٹرنری سائنس یونیورسٹی آف ایگریکلچر فیصل آباد

8۔ ڈاکٹر محمد طارق جاوید ڈین فیکلٹی آف ویٹرنری سائنس زرعی یونیورسٹی فیصل آباد

9. ڈاکٹر عبدالرشید بھٹو ڈپٹی ڈائریکٹر پولٹری پروڈکشن اینڈ ریسرچ لائیوسٹاک اینڈ ڈیری ڈویلپمنٹ سندھ

10۔ ڈاکٹر شکیب اللہ خان وائس چانسلر گومل یونیورسٹی ڈی آئی خاں

11۔ ڈاکٹر غلام حسین جعفر سابق ڈائریکٹر جنرل لائیوسٹاک کوئٹہ

12۔ بریگیڈیئر امجد حسین جنرل ہیڈ کوارٹر کیو ایم جی برانچ آر وی اینڈ ایف ڈی ٹائچمنٹ راولپنڈی

13۔ پروفیسر ڈاکٹر کامران اشرف چیئرمین ڈیپارٹمنٹ آف پیراسٹالوجی یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز لاہور

14۔ ڈاکٹر محمد شعیب خاں ایسوسی ایٹ پروفیسر فیکلٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز گومل یونیورسٹی ڈیرہ اسماعیل خان کونسل کے صدر اور نائب صدر کے انتخابات کے لئے اجلاس 16 نومبر 2022 کو اسلام آباد میں طلب کیا گیا ہے۔

کونسل میں اس مرتبہ پاکستان ویٹرنری میڈیکل ایسوسی ایشن کا کوئی نمائندہ شامل نہیں کیا گیا کونسل کے ایک ترجمان کے مطابق پاکستان ویٹرنری میڈیکل ایسوسی ایشن کی طرف سے صوبائی رابطے کی وزارت کے سیکرٹری کو ایسوسی ایشن کی رجسٹریشن کے بارے میں مطمئن نہیں کیا جا سکا اس لئے یہ چار افراد اس ٹنیور میں نامزد نہیں ہو سکیں گے۔