انٹارکٹیکا کی برفانی تہہ سے پراسرار جاندار دریافت

سائنسدانوں نے انٹارکٹیکا میں ایک مخلوق کو دریافت کیا ہے

لاہور(نیٹ نیوز)اس برفانی براعظم میں برٹش انٹارٹک سروے کی ٹیم فلیچر رونی آئس شیلف میں 4 ہزار میٹر گہرائی میں ایک چٹان کا تجزیہ کررہے تھے جب انہوں نے کچھ عجیب جانداروں کو دریافت کیا۔سائنسدانوں کی اس تحقیق کے نتائج جرنل فرنٹیئرز ان میرین سائنس میں شائع ہوئے ۔تحقیق میں پہلی بار غیرمتحرک جانوروں کو دریافت کیا گیا تھا۔تحقیقی ٹیم نے ان جانوروں کو مسام دار آبی جانداروں کے طور پر شناخت کیا تھا اور اس دریافت نے سائنسدانوں کو دنگ کردیا تھا۔محققین کا کہنا تھا کہ یہ دریافت ایک خوش قسمت حادثہ تھا جس نے مہم کی سمت کو بدل دیا اور ثابت ہوا ہے کہ اس براعظم کی آبی زندگی حیران کن حد تک خاص ہے ۔ سائنسدان اب تک محض ایک ٹینس کورٹ جتنے رقبے کا تجزیہ ہی کرسکے ہیں۔یہ آئس شیلف 15 لاکھ سکوائر کلومیٹر رقبے پر پھیلی ہوئی ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے