جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ غیر فعال، افسر بے اختیار، حکومت واضع پالیسی نہ بناسکی

3 روز میں 4 نوٹیفکیشن،وزیر اعظم کی مداخلت پر محکمے ختم کرنے ،افسروں کو سیکرٹری پنجاب کے ماتحت کرنیکاحکم معطل کرنا پڑا ، وزیر اعلیٰ کے اجلاس میں غیر متعلقہ افراد پر وزرا ناراض، نئی ترامیم کرینگے :راجہ بشارت، سیکرٹریٹ موثر بنارہے :فردوس

لاہور(لائیوسٹاک پاکستان )جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ میں افسروں کو تاحال اختیارات نہیں دئیے گئے ، ذرائع کے مطابق سیکرٹریٹ تقریباً غیر فعال ہوگیا ہے کیونکہ حکومت کبھی جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ میں محکمے قائم کرتی ہے تو کبھی ختم کردیتی ہے ، حکومت پنجاب نے معاملے پر 3 روز میں 4 نوٹیفکیشنز جار ی کئے ۔ افسروں کے اختیارات واپس اور محکمے ختم کئے جانے کے بعد اگلے ہی روز وزیر اعظم آفس کی جانب سے فون آنے پر نوٹیفکیشن معطل کردیا گیا، جبکہ یہ معطلی کابینہ کی منظوری کے بغیر ہی کی گئی ۔ تفصیلات کے مطابق جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے حوالے سے وزیراعلیٰ نے اڑھائی سالوں میں 13جبکہ وزیر قانون نے 31اجلاسوں کی صدارت کی لیکن حکومت واضح پالیسی نہ بنا سکی ۔ 30مارچ کو حکومت پنجاب نے 7اہم محکمے ختم کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کیا ، جن میں خزانہ، پی اینڈ ڈی، داخلہ، قانون، پراسیکیوشن و دیگرشامل ہیں، اس کے علاوہ نوٹیفکیشن میں کہا گیا کہ جنوبی پنجاب میں جو سیکرٹریزبیٹھیں گے وہ ایڈیشنل سیکرٹری ہوں گے اور سیکرٹری جنوبی پنجاب نہیں کہلائیں گے بلکہ ان کوسیکرٹری پنجاب کے ماتحت کردیا گیا، جس پر بہت سے اعتراضات سامنے آئے اور متعدد افسروں نے سخت ناراضگی کا اظہار کیا۔ جبکہ وزرا یہ معاملہ وزیراعظم عمران خان تک لے گئے اور ان کے سامنے شکایات کے انبار لگا دئیے ، جس پر وزیراعظم عمران خان نے وزیراعلیٰ کو فوری معاملات بہتر بنانے کا ٹاسک دیا تو پہلاایکشن یہ ہوا کہ یہ نوٹیفکیشن اگلے ہی روز یکم اپریل کوحکومت پنجاب کی جانب سے واپس لے لیا گیا جبکہ جنوبی پنجاب کے سیکرٹریز کو بااختیار بنانے کا اعلامیہ بھی جاری کر دیا گیا۔ دوسری جانب حکومت نے پہلے ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنوبی پنجاب کو افسروں کی تعیناتی سمیت اہم اختیارات دئیے تھے ۔ 9 ماہ کے دوران جنوبی پنجاب میں 57افسر و ملازمین کو تعینات کرنے کے بعد آرڈر واپس لئے گئے ، جبکہ ایڈیشنل چیف سیکرٹری زاہد اخترزمان سمیت 4 افسروں نے کام کرنے سے معذرت کی تھی، جس پر حکومت نے اضافی چارج دیکر کام چلایا اور ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنوبی پنجاب کے عہدے کا اضافی چارج سیکرٹری آبپاشی سیف انجم کے پاس ہے ،اسی طرح جنوبی پنجاب میں ایڈیشنل آئی جی کا عہدہ بھی تقریباً ایک ماہ تک خالی رہا کیونکہ کوئی افسر لگنے کو تیار ہی نہیں ، اس کے علاوہ جنوبی پنجاب میں داخلہ ، قانون سے متعلق معاملات بھی لاہور سے دیکھے جارہے ہیں۔ اس ساری صورتحال میں گزشتہ ماہ 7 مار چ کو وزیراعلیٰ کے حکم پر پرنسپل سیکرٹری نے اس حوالے سے ہنگامی اجلاس طلب کیا تھا ، جس میں افسروں کی جانب سے کہا گیا کہ ہمارے پاس اختیارات ہی نہیں، فیصلے کیسے لیں، اور کونسے اختیارات استعمال کریں؟جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ میں آئے روز مداخلت ہوتی ہے ، ہم کوئی فیصلہ کریں تو لاہور سے کوئی نیا فیصلہ لاگو کر دیا جاتا ہے ۔ جبکہ سابق ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنوبی پنجاب زاہد اختر زمان نے کہا تھا کہ میں نے بہت کوشش کی جنوبی پنجاب میں مسائل بہتر ہوسکیں، غیر ضروری مداخلت کو ختم کروں، لیکن ایسا نہ ہوا اورجب بطور ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنوبی پنجاب میرے پاس اختیارات ہی نہیں رہے تو تبادلہ کروالیا۔ بعد ازاں وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے بیوروکریسی کے اختیارات سے متعلق اعلیٰ اختیاراتی وزرا کمیٹی بنائی لیکن وہاں بھی وزرا کی جانب سے شدید اعتراضات کئے گئے ، جس کے بعد وزیر اعظم کے حکم پر وزیراعلیٰ نے گزشتہ روز ہنگامی طورپر اجلاس طلب کیا، لیکن اس میں کچھ ایسے افراد کو بھی شامل کیا گیا جن کا حکومت سے کوئی تعلق ہے اور نہ ہی وہ صوبائی وزیر ہیں۔ مسلم لیگ ق کے طارق بشیر چیمہ کے بھائی طاہر بشیر چیمہ کو بھی اجلاس میں بلایا گیا جس پر وزرا نے پھر سخت ناراضگی کا اظہار کیا ۔ تاہم وزیر اعلیٰ نے گزشتہ روز اجلاس میں شرکا کی آرا سننے کے بعد کہا سیکرٹری کو بااختیار بنادیا گیا ہے اور جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کو مزید فعال بنایا جائے گا ۔ اس حوالے سے محکمہ آئی اینڈ سی کے حکام نے موقف دیتے ہوئے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ نے وزرا کمیٹی بنادی ہے جو معاملات کو دیکھ رہی ہے ، جلد جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ سے متعلق کچھ اہم فیصلے لئے جائیں گے ۔ جبکہ وزیر قانون راجہ بشارت نے کہا حکومت جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے حوالے سے معاملات کو دیکھ رہی ہے ، کچھ ضروری ترامیم کیں لیکن اب ان پر نظر ثانی کر رہے ہیں اور مزید کچھ اہم ترامیم کی جائیں گی۔ وزیراعلیٰ کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ مکمل فعال ہے ، اہم محکموں کے سیکرٹریز تعینات ہیں، عوام کی فوری داد رسی کے لئے سیکرٹریٹ کو مزید موثر بنایاجارہا ہے ،پنجاب حکومت جنوبی پنجاب کی خدمت کا سفر جاری رکھے گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے