پنجاب میں لمپی سکن کی دوسری ممکنہ لہر سے بچاﺅ کیلئے ویکسی نیشن مہم کا آغاز،ڈیڑھ ارب روپے کی گرانٹ فراہم

اسلام آباد (لائیوسٹاک پاکستان) لائیوسٹاک وڈیری ڈویلپمنٹ ڈیپارٹمنٹ پنجاب نے لمپی سکن کی دوسری ممکنہ لہر سے بچاو کیلئے ویکسی نیشن مہم کا آغاز کر دیا۔لائیوسٹاک حکام نے اے پی پی کو بتایاکہ حکومت پنجاب نے لمپی سکن ویکسی نیشن کیلئے ڈیڑھ ارب روپے کی گرانٹ فراہم کی ہے اور لمپی سکن کے موثر کنٹرول کیلئے وسیع پیمانے پر60 لاکھ ڈوزز مہیا کردی گئی ہیں۔

انہوں نے بتایاکہ ویکسین لائیوسٹاک فارمرز کے گھر جاکر مویشیوں کو مفت لگائی جائے گی۔ لائیو سٹاک وڈیری ڈویلپمنٹ ماہرین نے کہاہے کہ لمپی سکن ڈیزیز انسانوں کے لیے قطعی خطرے کا باعث نہیں ، دودھ اور گوشت انسانوں کے لیے مکمل محفوظ ہے ۔ ڈائریکٹرلائیو سٹاک وڈیری ڈویلپمنٹ راولپنڈی ڈویژن ڈاکٹر سرفراز احمد چٹھہ نے لمپی سکن ڈیزیزبارے عوامی ابہام کے پیش نظر واضح کیاکہ لمپی سکن ڈیزیز یعنی گلٹی دار جلدی بیماری ایک وائرس کی وجہ سے ہوتی ہے، جوکہ کیپری پاکس وائرس اور خاندان پاکسوائراڈ کا رکن ہے۔

یہ وائرس گائیوں کو زیادہ متاثر کرتا ہے جبکہ بھینس محفوظ ہے ۔ ڈاکٹر سرفراز احمد چٹھہ نے کہاکہ کسی بھی سطح پر یہ بیماری ا نسانوں کے لیے کسی طرح کے خطرے کا باعث نہیں ہے ۔لمپی اسکن کے نتیجے میں دودھ کی پیداوار میں کمی،جانوروں میں اسقاط حمل، بانجھ پن اور خراب کھالوں کی وجہ سےمعاشی نقصان ہوتا ہے۔ ایڈیشنل ڈائریکٹر لائیو سٹاک راولپنڈی ڈاکٹر نوید سحر زیدی نے کہاکہ لمی اسکن بیماری سے بچاﺅ کے لیے جانوروں کی نقل و حمل محدود کی جائے ،متاثرہ جانور کو باقی جانوروں سے علیحدہ رکھا جائے ،مچھر مار سپرے یقینی بنایاجائے اور لائیو سٹاک ماہرین کی مشاورت سے جانوروں کو ملٹی وٹامن سمیت دیگر ادویات دی جائیں ۔