’’وزڈم‘‘ دنیا کی بوڑھی ترین مادہ !

تحریر : عمر گاکھڑی

”وزڈم‘‘ نامی ایک پرندے کو 70 ویں سالگرہ پر دنیا کا عمر رسیدہ ترین پرندے کا اعزاز دے دیا گیا ہے۔ اس سے بھی زیادہ حیران کر دینے والی بات یہ ہے کہ وہ اب بھی اپنے ننھے بچوں کی پرورزش کر رہی ہے!ماہرین نے اسے دنیا کا سب سے قدیم نسل پالنے والا پرندہ قرار دے دیا۔ ”وزڈم‘‘ قدیم ترین جنگلی پرندہ ہے،وہ ایک بار پھر ممتا جیسے عظیم کام کو سر انجام دے چکا ہے، جو کہ عجب ہے۔
”وزڈم‘‘ جسے 1956 میں اس کی بلوغت میں بینڈڈ کیا گیا تھا اس نے تب سے لے کر آج تک تقریباً 30 سے لے کر 36 یا ممکنہ اس سے بھی زیادہ بچوں کی پیدائش کی ہے۔ جو کہ توقعات کے بالکل بر عکس ہے۔برٹش انٹارکٹک سروے کے ایک سمندری ماہر ماحولیات پروفیسر رچرڈ فلپس نے کہا ہے کہ الباتروس انتہائی دیرینہ ہوتے ہیں لیکن وزڈم غیر معمولی طور پر دوسرے الباتروس کی نسبت بہت زیادہ عمر کا ہے۔ پروفیسر فلپس نے بتایا ہے کہ وزڈم کے بعد بھی قدیم الباتروس ان کے پاس آیا ہے جو وزڈم سے صرف 9 سال چھوٹا یعنی 61 سال کا ہے۔
الباتروس ہمیشہ جوڑے کی شکل میں رہتے ہیں اور انکی زندگی ان کے ساتھی پر مربوط ہوتی ہے، اور وزڈم کی لمبی عمر کا مطلب ہے کہ اس کے متعدد ساتھی رہ چکے ہیں۔ڈاکٹر بینٹ فلنٹ نے کہا ہے کہ اس بچے کا باپ ”اکیامائی‘‘ نامی ایک الباتروس ہے یہ دونوں 2012 سے وزڈم کے ساتھ ساتھ ہیں، الباتروس جب بچے کی پیدائش کرتے ہیں تو دونوں والدین خوراک کے فرائض بانٹ لیتے ہیں، وہ مچھلی کے انڈوں سے خوراک حاصل کر کے اپنے نومولود بچے کو دیتے ہیں۔ وزڈم اور اس کا موجودہ ہمسفر بھی اسی طرح مل کر نومولود کی ضروریات پوری کریں گے۔ امریکی فش اینڈ وائلڈ لائف سروس نے بتایا کہ موسم گرما کے اختتام تک بچہ اُڑنے کے قابل ہو جائے گا۔
مڈ وے اٹول نیشنل وائلڈ لائف ریفیوج جو ہوائی جزیرے کے انتہائی شمالی سرے میں پایا جاتا ہے وہ دنیا کی سب سے بڑی پرندوں کی کالونی ہے جہاں الباتروس اور لاکھوں سمندری پرندوں کا گھر ہے۔ ہر سال سردیوں میں وزڈم اور اکیامائی جیسے الباتروس اس ڈھائی مربع میل جزیرہ پر آتے ہیں، گھونسلے بناتے ہیں اور میل ملاپ کرتے ہیں۔
پروفیسر فلپس کہتے ہیں کہ عام طور پر آپ انسانوں کی طرح الباتروس کی محدود عمر کی توقع کرتے ہیں اور بڑھتی عمر کے ساتھ ساتھ ان کی افزائش نسل اور اس کے خاتمے کوبھی ایسے ہی لیتے ہیں لیکن وزڈم میں یہ غیر معمولی بات دیکھنے کو ملی ہے خیران کی کم عمر بھی پائی جاتی ہے اور مزید یہ کہ ابھی تک افزائش نسل جاری رکھے ہوئے ہے۔وزڈم بچوں کی پیدائش جاری رکھنے کیلئے کتنے سال زندہ رہے گا؟ اس بارے میں محقق مائیک پارر نے کہا ”یہ کوئی انسان نہیں جانتا۔ انہوں نے کہا کہ اب تک پرندوں کی بقا ء کی کوششیں باقی ہیں۔مڈوے ایٹول وائلڈ لائف ریفیوج کے ماہرحیاتیات 85 سالوں سے وزڈم جیسے ہزاروں الباتروس کا مطالعہ کر رہے ہیں اور انکا سراغ لگا رہے ہیں۔ وزڈم بھی کئی دہائیوں سے اس جزیرے پر واپس آرہا ہے، یہاں تک کہ ماہر حیاتیات چانڈلر رابنس کی بھی جان بچائی ہے جس نے پہلے اسے قید کر دیا تھا۔وزڈم کی واپسی نہ صرف ہر جگہ پرندوں سے محبت کرنے والوں کو متاثر کرتی ہے بلکہ ہمیں یہ بہتر طور پر سمجھنے میں بھی مدد ملتی ہے کہ ہم ان سمندری جانوروں اور ان کی رہائش گاہ کومحفوظ بنائیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے