سولہ ہزار گھرانوں کو بکریاں،مرغیاں فراہم کرچکے ،کوآرڈینیٹرایپ لائیوسٹاک

ماؤں اور بچوں میں غذائیت کی کمی دور، دیگر مسائل کے حل میں کردار ادا کر رہے ہیں،77فیصد ہدف حاصل، باقی اس سال پورا کرلیں گے ،کوآرڈی نیٹر ایپ لائیو اسٹاک سیکٹر

کراچی ( پ ر) صوبہ سندھ کے 23 اضلاع میں ایکسیلیریٹڈایکشن پلان (ایپ)جاری ہے ، یہ ورلڈ بینک کے فنڈ سے چلنے والا پروگرام ہے جو حکومت سندھ کے پلاننگ اینڈ ڈیولپمنٹ بورڈ کے تحت ماؤں اور بچوں میں غذائیت کی کمی اور اس کے نتیجے میں پیدا ہونے والے مسائل کے ممکنہ حل میں کردار ادا کررہا ہے ۔ یہ بات ایگزیکٹو ڈائریکٹر سندھ انسٹیٹیوٹ آف اینیمل ہیلتھ کراچی اور ایپ لائیو اسٹاک سیکٹر کے پروگرام کوآرڈی نیٹر ڈاکٹر نذیر حسین کلہوڑو نے صحافیوں سے گفتگو میں کہی۔ انہوں نے مزید کہا کہ غذائیت کی کمی کی شکار فیملیز کو بکریوں اور مرغیوں کی فراہمی سے فوری فوائد تو حاصل ہوئے ہی ہیں لیکن وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ جانوروں کی افزائش نسل بھی ہوئی جس کی بدولت پسماندہ گھرانوں کو حاصل ہونے والا فائدہ کئی گنا بڑھ گیا ہے، جہاں 5 بکریاں دی گئی تھیں وہاں اب 20 ہوگئی ہیں، اس وقت گھرانوں کے پاس بڑی تعداد میں مرغیاں اور بکریاں موجود ہیں ۔ ڈاکٹر نذیر نے بتایا کہ سندھ کے 17 اضلاع میں مجموعی طور پر 16000 سے زائد گھرانوں کو بکریاں ، مرغیاں اور ہر فیملی کو 50 کلو گرام پولٹری فیڈ فراہم کی گئی ہے ، 93,500 گھرانوں میں موجود جانوروں کی بڑی تعداد کو ویکسین لگائی جا چکی ہے تاکہ وہ بیماریوں سے محفوط رہ سکیں ، ہم اپنے اہداف کا 77 فیصد حاصل کرچکے ، باقی 23 فیصداس سال پورا ہوجائے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے